ہمارے بارے میں جانیے

مسئلہ: مقامی میڈیا کی عدم موجودگی + مقامی حکومت کی عدم موجودگی = عوامی مسائل پر عدم توجّہ
پاکستان میں قومی اور صوبائی سطح پر میڈیا اداروں کی کثرت ہے، مگرمقامی طور پر شہر یا ٹاؤن کی سطح پرایسے اداروں کی شدید کمی ہے. مزید یہ کہ ان اداروں میں اکثریت ان کی ہے جن کی ملکیت پرائیویٹ ہے اور جن کا مقصد محض اشتہارات سے پیسے کما کر منافع کمانا ہے
ایک اور مسئلہ یہ ہے کہ چونکہ زیادہ تر ٹی وی کے ناظرین اور اخباروں کے قارین پاکستان کے بڑے شہروں میں بستے ہیں ، اس لئے زیادہ تر خبریں انہی کے متعلق ہوتی ہیں جبکہ چھوٹے شہروں اور قصبوں سے متعلق خبریں شاز و ناذر ہی نظر آتی ہیں. اس پر مستزاد یہ کہ تقریباً تمام بڑے میڈیا اداروں کے آفس اور نمائندے بڑے شہروں تک محدود ہیں جس کی وجہ سے ان کے لئے مالی طور پر یہ زیادہ فائدہ مند ہے کہ وہ وہیں سے خبریں اکٹھی کریں بجاے اس کے کہ وہ ا پنے نمائندوں کو دور دراز کے قصبوں اور دیہاتوں میں بھیجیں
اس کا لا محالہ نتیجہ یہ ہے کہ اگر کہیں گوادر یا راجن پور میں کوئی سیاسی ریلی نکلتی ہے یا کوئی کرپشن کا کیس سامنے آتا ہے تو اس کو وہ کوریج نہیں ملتی جو ایسے کسی واقعے کو کراچی یا لاہور جیسے بڑے شہر میں ملتی ہے . میڈیا کے اس رویے سے بہت سارے مسائل جنم لیتے ہیں مگر سب سے پریشان کن بات یہ ہے کہ اس سے چھوٹے قصبوں میں حکومتی معاملات کی شفافیت شدید متاثر ہوتی ہے اور عوامی مسائل پر کوئی توجہ نہیں دی جاتی. لوکل گورنمنٹ کا نظام نہ ہونے سے یہ مسئلہ اور بھی شدید ہو چکا ہے
ضرورت اس امر کی ہے کہ اس واضح فرق کو مٹایا جائے اور دور دراز کے علاقے کے لوگوں کو بھی یہ موقع دیا جائے کہ وہ اپنے مسائل کو اجاگر کر سکیں
ایک تجربہ
ایک موثر اور نمائندہ مقامی حکومت کا کوئی متبادل نہیں البتہ یہ ہو سکتا ہے کہ مقامی آبادی کی مدد سے ایک ایسی ویب سائٹ بنائی جائے جہاں ایک علاقے کے اپنے مسائل پر بات چیت ہو تاکہ حکومتی کارکردگی کا اندازہ ہو سکے اور مقامی حکام کو عوامی مسائل پر توجہ دینے پر مجبور کیا جا سکے
اس حکمت عملی کو مزید موثر اس طرح سے بنایا جا سکتا ہے کہ مقامی، صوبائی، اور قومی میڈیا اداروں کے باہمی روابط کو بہتر بنایا جائے تاکہ چھوٹے قصبوں اور شہروں کی خبریں بھی قومی سطح تک پہنچ سکیں ، ان کی مدد سے ان مقامی مسائل اور ان سے متعلق عوام کی رائے کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچایا جائے اور ان مسائل کو جلد از جلد حل کروایا جائے
پاک وائسز ایک تجربہ ہےBytes for all اس سے پہلے ایسے بہت سے انٹرنیٹ سے متعلق پروجیکٹس پر کام کر چکا ہے.اس پروجیکٹ کا مقصد جنوبی پنجاب اور بلوچستان کے چھوٹے قصبوں میں کمیونٹی ویب سائٹس بنانا ہے
طریقۂ کار
انٹرنیٹ معلومات فراہم کرنے کا آسان ترین ذریعہ ہے
اس پروجیکٹ میں انٹرنیٹ کے استعمال کا مرکزی کردار ہے . اس کی وجہ یہ ہے کہ ویب سائٹ بنانا ایک اخبار یا ریڈیو یا ٹی وی چینل شروع کرنے سے قدرے آسان ہے. اس پروجیکٹ کے لئے ہم ان قصبوں کو چنیں گے جہاں انٹرنیٹ تک رسائی آسانی سے ممکن ہو. اس کا فائدہ یہ بھی ہے کہ Bytes for all آن لائن مسائل کے حوالے سے بہت سے پروجیکٹس پر پہلی بھی کام کر چکی ہے
کچھ جانب سے یہ اعتراض ہو سکتا ہے کہ جن دو علاقوں میں یہ پروجیکٹ کیا جا رہا ہے وہاں کمپیوٹر کی تعلیم اور انٹرنیٹ رسائی کافی محدود ہے. مگر ہمارا یہ ماننا ہے کہ اگرعام عوام اور دوسرے فیصلہ کن عوامل کا ایک محدود طبقہ بھی ان ویب سائٹس کی جانب راغب ہو گیا تو دوسرے لوگ بھی ان کی جانب متوجّہ ہوں گے
ہمارا ارادہ ہے کہ منتخب کردہ قصبوں میں سے ہر ایک کی اردو میں ویب سائٹ بنائی جائے گی جہاں ایک سیکشن میں روز کی مقامی خبریں اور حالات حاضرہ ہوں اور دوسرے سیکشن میں ایک فورم ہو جہاں بحث و مباحثہ اور بات چیت کر سکیں. ہم یہ بھی کوشش کریں گے کہ مقامی لیڈران ، سیاستدان اور بیوروکریٹ بھی اس ویب سائٹ کے لئے لکھیں اور اس پر اٹھائے گئے مسائل اور شکایات کا جواب دیں
پلان
مقامی تنظیموں اور قومی میڈیا کے ساتھ پارٹنرشپ
ہم ہرعلاقے میں ایک مقامی تنظیم سے رابطہ کریں گے تاکہ وہ ویب سائٹ کو چلائیں اور ایک، دو افراد کو چنا جائے گا جو اس علاقے کی خبروں کو اکٹھا کر کے ان کی تصدیق کریں تاکہ ان خبروں کو ویب سائٹ پر ڈالا جا سکے. طویل مدّتی پلان البتہ یہ ہے کہ مقامی تنظیموں کا ایک آزاد بورڈ ویب سائٹ کو خود مختار انداز میں چلائیں
اس کو یقینی بنانے کے لئے ہم تمام منتخب کردہ قصبوں میں مقامی پارٹنرز کو تکنیکی اور صحافتی پہلوؤں پر ٹریننگ دیں گے اورزیادہ سے زیادہ لوگوں کو ویب سائٹ کے بارے میں بتانے کے لئے ان کی ہر ممکن مدد کریں گے
ان تمام ویب سائٹس سے پھر اہم اور دلچسپ خبروں کو چن کر انکا انگلش میں ترجمہ کیا جائے گا اور ان کو پاک وائسز ٹیم پروجیکٹ کی ویب سائٹ اور سوشل میڈیا کے اکاؤنٹس پر چھاپے گی. اس پروجیکٹ ویب سائٹ کا مقصد ہوگا کہ مقامی ویب سائٹس کا مواد قومی سطح پر اجاگر ہو سکے. قومی میڈیا سے پارٹنرشپ کی مدد سے ہم ان میں سے چنی گئی خبروں کو قومی سطح پر بھی چھپوائیں گے
مستقبل
ہم مقامی سطح پر ایسی تنظیموں کے ساتھ کام کریں گے جو پروجیکٹ کے مقصد سے ہم آہنگ ہوں اور کسی تنظیمی مفاد کی بجاے مقامی آبادی کو پروجیکٹ سے ہونے والے فائدے کے لئے کام کریں. اس امر کی ضرورت اس لئے بھی ہے کہ مقامی ویب سائٹس کو چلانے اور اس پر خبریں مہیا کرنے والوں کا مقامی ہونا بہت اہم ہے تاکہ وہ اس کا فائدہ خود دیکھ سکیں. مثال کے طور پر اگر ان کو یہ ادراک ہو کہ چاہے تعلیم کا مسئلہ ہو یا قریب کے علاقے میں صفائی کی ضرورت ہو یا کوئی شخص کاروبار کرنا چاہتا ہے مگر مقامی حکام رشوت مانگتے ہیں ، ان تمام مسائل کو وہ اجاگر کروا کر حل کروا سکتے ہیں تو وہ خود اس پروجیکٹ کو جاری رکھنے میں دلچسپی لیں گے
ہم چاہتے ہیں کہ یہ پروجیکٹ نہ صرف لمبے عرصے تک جاری رہے بلکہ مقامی ویب سائٹس ایسی ہوں کہ کسی اور قصبے میں ایسی ویب سائٹ بنانا انتہائی آسان ہو تاکہ اردگرد کے قصبات کے لوگ بھی اپنے لئے ایسی ویب سائٹس بنا سکیں. اس پہلو کو مدنظر رکھتے ہوۓ ہمارا ارادہ ہے پروجیکٹ کے دوران ایک ایسا کتابچہ تیار کیا جائے جس میں ویب سائٹ بنانے اور اس کو چلانے کے حوالے سے تکنیکی اور تنظیمی ہدایات موجود ہوں